Search

جہانگیر ترین کا لندن پلان۔۔۔کھریاں کھریاں۔۔۔راشد مراد ۔۔۔24/06/2020


آج کھریاں کھریاں میں بات کریں گے تحریک انصاف کے شوگر ڈیڈی جہانگیر ترین کی اپنے بیٹے کے ساتھ لندن والے دورے کی اور ان غیر مصدقہ خبروں کی جن میں کہا جا رہا ہے کہ جہانگیر ترین کو عمرانی شکنجے سے نجات دلوانے کے لئے میاں نواز شریف نے کچھ شرائط رکھی ہیں اور ان شرائط کے پورا ہونے کے بعد اس بات کا امکان ہے کہ میاں نواز شریف اسے ملاقات کے لئے گرین سگنل دے دیں گے۔


عمران نیازی کی جرنیلی افادیت چونکہ کئی ماہ سے ختم ہو چکی ہے اور جنرل باجوہ کی خواہش بھی ہے اور کوشش بھی ہے کہ انہیں اب عمران نیازی سے بہتر نہیں تو کم از کم اس جیسا بوٹ پالش کرنے والا سیاسی نوکر میسر آ جائے ۔۔۔ یہی وجہ ہے کہ انہوں نے خود بھی ن لیگ کی قیادت سے لندن میں بھی رابطے کئے تھے اور پاکستان میں موجود لوگوں سے بھی گپ شپ کی ہے۔۔۔مسلم لیگ ن کی جیلوں سے باہر رہنے والی لیڈر شپ میں کچھ لوگ تو جنرل باجوہ کی قیادت میں کام کرنے کے لئے تیار ہیں ۔


ان ن لیگیوں کا خیال ہے کہ اس سمجھوتے سے تھوڑا بہت سیاسی نقصان ہوگا لیکن اس سے سیاسی جیلر عمران نیازی سے تو جان چھٹ جائے گی۔لیکن ان ن لیگیوں کے پلان اور جنرل باجوہ کی خواہش کے راستے میں سب سے بڑی رکاوٹ میاں نواز شریف ہے جس نے جنرل باجوہ کی ایکسٹینشن پر آمین کے کہنے کے باوجود ابھی تک مکمل طور پر سرنڈر نہیں کیا۔۔۔ن لیگ کا ووٹر چند جرنیلی سمجھوتوں کے باوجود میاں نواز شریف اور اس کی بیٹی مریم نواز شریف کے ساتھ کھڑا ہے۔ اور یہی بات کافی حد تک ن لیگ کی جرنیلی قیادت کو روکے ہوئے ہے

جہانگیر ترین کا لندن پلان اپنے سیاسی کاروبار کو ڈوبنے سے بچانے کے لئے ہے۔۔۔۔ میاں نواز شریف کے ساتھ اس کی کی ملاقاتوں والی خبروں میں مرچ مصالحہ زیادہ ہے اور حقیقت نہ ہونے کے برابر ہے۔۔۔جہانگیر ترین کے پاس نہ صرف دولت کی فراوانی ہے بلکہ اس کے پاس ایک بہت ہی موثر میڈیا سیل بھی ہے جو کہ ان دنوں تحریک انصاف کی مشہوری کی بجائے مکمل طور پر اپنے پے ماسٹر کے لئے کام کر رہا ہے۔۔۔جہانگیر ترین کی ملاقاتوں کی خبریں اور پریس کانفرنس والی پھلجھڑیاں اسی لئے چھوڑ رہا ہے کہ اس سے عمران نیازی پر دباو بڑھے اور وہ ایک بار پھر جہانگیر ترین کے جہاز میں سوار ہو جائے۔

جہانگیر ترین اس وقت لندن میں ایک تیر سے دو شکار کر رہا ہے۔۔۔اس کا پہلا ہدف تو عمران نیازی ہے جس پر اس نے اربوں روپے کی انویسٹمنٹ کر رکھی ہے اور اسے اچھی طرح پتہ ہے کہ شریف فیملی سے کہیں زیادہ عمران نیازی اس کے لئے فائدہ مند ہے لیکن اب وقتی طور پر کچھ ایسے لوگ اس کے اور عمران نیازی کے درمیان ٓا گئے ہیں جنہوں نے اسے نکرے لگا دیا ہے لیکن اس کی اب بھی یہی خواہش ہے کہ وہ اپنے جہاز کو عمران نیازی کی سیاست کے فروغ کے لئے استعمال کرے۔۔۔اس کی یہ خواہش سیدھے طریقے سے پوری نہیں ہو رہی اس لئے وہ گھی ٹیڑھی انگلی سے نکالنے میں مصروف ہے۔


رہی بات میاں نواز شریف کے ساتھ ملاقات کی تو مجھے نہیں لگتا کہ میاں نواز شریف اس چینی چور کو اپنے قریب بھی پھٹکنے دیں گے۔۔۔ٓاپ کو یاد ہو گا کہ کچھ ماہ پہلے ایک جرنیلی سیاستدان چوہدری نثار بھی اسی طرح علاج کے بہانے لندن آیا تھا۔۔۔اس نے بھی میاں نواز شریف سے ملنے کے لئے بہت پاپڑ بیلے۔۔۔ن لیگ میں میاں نواز شریف کے قریبی رشتہ داروں کو بھی استعمال کرنے کی کوشش کی لیکن میاں نواز شریف نے اسے ملنے سے انکار کر دیا تھا۔۔۔پاکستان کی جرنیلی سیاست میں چوہدری نثار کا کردار جہانگیر ترین سے کہیں زیادہ اہم ہے۔


چوہدری نثار بھی جرنیلی رابطوں میں شیخ رشید کا ہی اپ گریڈڈ ورژن ہے ۔۔۔فرق صرف اتنا ہے کہ شیخ رشید ان رشتہ داریوں کا ہر وقت زکر کرتا رہتا ہے لیکن چوہدری نثار خاموشی کے ساتھ ان رشتہ داریوں سے فائدے بھی اٹھاتا ہے اور انہیں مضبوط کرنے کے لئے اپنی ہی سیاسی جماعت کی بیڑیوں میں وٹے بھی ڈالتا رہتاہے۔

کہنے کا مقصد یہ ہے کہ اگر میاں نواز شریف کو بوٹ کو عزت دینی ہوتی تو وہ اس نئے جرنیلی کبوتر کا پیغام سننے کی بجائے چند ماہ پہلے ہی چوہدری نثار سے مل چکا ہوتا۔


جہانگیر ترین کی دولت اور سیاست دونوں کی میاں نواز شریف کے لئے کوئی اہمیت نہیں۔۔۔رہی بات ان ارکان اسمبلی کو جو جہانگیر ترین کے جہاز میں سفر کرتے رہے ہیں تو ان لوٹوں کے ووٹ بھی میاں نواز شریف کے لئے کوئی کشش نہیں رکھتے۔۔۔میاں نواز شریف کو اچھی طرح پتہ ہے کہ ووٹ کو عزت دو والا پودا پنجاب کے سیاسی کھیتوں میں اچھی طرح جڑ پکڑ چکا ہے ۔۔۔جب بھی صاف ستھرے اور جرنیلی گند سے پاک انتخابات ہوئے تو جیت ن لیگ ہی کی ہو گی۔

2,295 views